طلاق کا دکھ جھیلنے کے لیے قبرستان میں مراقبے کا رجحان

Divorce Grave

 دنیا کے اکثر ممالک کی طرح چینی خواتین بھی طلاق کے بعد شدید ذہنی اور نفسیاتی صدمےکے شکار ہوجاتی ہیں۔ اب خواتین کا ایک گروہ دُکھ کی اس گھڑی کو جھیلنے کےلیے کچھ وقت قبرستان میں لیٹ کر مراقبہ کرتا ہے تاکہ اسے کچھ ذہنی سکون مل سکے۔

سب سے پہلے یہ طریقہ ایک 30 سالہ خاتون لیو تائجیائی نے شروع کیا اور اب وہ دیگر خواتین کی اسی طرح مدد کررہی ہیں۔ لیو 19 سال کی عمر میں رشتہ ازدواج سے منسلک ہوئی تھیں اور دو سال بعد ایک بچے کو جنم دیا تھا ۔ پھر 2015 میں انہیں طلاق ہوگئی اور وہ اتنی زیادہ متاثر ہوئیں کہ اپنا کوئی کاروبار شروع کرنے سے بھی قاصر تھیں۔ اس کے بعد انہوں نے قبرستان میں جاکر مراقبہ کیا تو ان کی کیفیت کچھ سنبھلی اور اب انہوں نے ایسی ہی خواتین کی مدد شروع کردی ہے جو اپنے ماضی سے چھٹکارا حاصل کرنا چاہتی ہیں۔